Psoriasis | چنبل

  1. Homepage
  2. Diseases & Conditions
  3. Psoriasis | چنبل
Psoriasis | چنبل

چنبل


چنبل ایک جِلدی بیماری ہے جو جِلدی خلیات کی مدّتِ حیات کو متاثر کرتی ہے۔ چنبل ایک عام جلدی بیماری ہے، یہ عُمر کے کِسی حِصّے میں بھی ہوسکتی ہے، مگر عموماً یہ پندرہ(15) سے پچیس(25) سال کی عُمر کے دوران ہوتی ہے۔

جِلدی خلیات جِلد کے تعمیری بلاکس building blocks ہوتے ہیں۔ عام طور پر جِلدی خلیات بِیس (20) سے (28) دِن تک تک زِندہ رہتے ہیں اور پِھر یہ نئے صحتمند جِلدی خلیات سے تبدیل ہوجاتے ہیں۔

چنبل جِلدی خلیات کی مدّتِ حیات کو تین (3) سے پانچ (5) دِن کم کردیتا ہے۔ تیزی سے پُختہ ہونے والے چنبل کے جِلدی خلیات جِلد سے اُس طرح نہیں جھڑتے، جیسے کہ عام جِلدی خلیات جھڑتے ہیں، جِس کے نتیجے میں جِلد کی سطح پر یہ خلیات چِکتیوں اور زخموں کی شکل میں جمع ہوجاتے ہیں۔ اس کا حتمی نتیجہ یہ نِکلتا ہے کہ ایسی چِکتیاں بن جاتی ہیں جو چاندی کی طرح سفید پرتوں سے ڈھکی ہوتی ہیں، یہ پرتیں خُشک اور خارش آور اور کچھ صورتوں میں تکلیف دہ ہوتی ہیں۔ یہ ایک پُرانا یا دائمی مرض ہے (یعنی یہ ایک لمبے عرصے تک رہتا ہے) اور اگرچہ اس کی علامات بہتر ہوسکتی ہیں، مگر علامات بھڑک اُٹھنے کا خطرہ ہمیشہ رہتا ہے (یعنی جس وقت علامات بدتر ہوجائیں)۔

کُچھ افراد کے لیے چنبل کا مرض جلدی سوزش کے باوجود قابلِ بردا‎‎شت ہوتا ہے، جبکہ کُچھ کے لیے یہ تکلیف دہ زخموں یا چنبلی ورم کی صُورت میں ایک باقاعدہ مسئلہ بن سکتا ہے۔ چنبلی ورم چنبل کی ایک شدید قسم ہے جو جوڑوں Joints کو متاثر کرتا ہے اور تھکاوٹ، سُوجن اور ربطی بافتوں Connective tissues میں درد میں مُبتلا کرتا ہے۔

چنبل کی متعدّد اقسام ہیں اور ان میں سے زیادہ تر کے بھڑک اُٹھنے اور کم ہوجانے (بہتر ہوجانے) کے ادوار ہوتے ہیں۔

اِن اقسام میں درج ذیل شامِل ہیں:

پلیگ چنبل Plague Psoriasis- یہ سب سے زیادہ عام قسم ہے (تقریباً نوّے(90) فیصد کیسِز) اور اس میں جِلدی زخم بڑھے ہوئے، لال اور سفید پپڑیوں والے ہوجاتے ہیں۔ اِن کو جِلدی پلیگ کہا جاتا ہے۔ یہ قسم زیادہ تر کہنیوں، گُھٹنوں، کھوپڑی یا سر کی کھال اور پیٹھ کے نِچلے حصّے میں ہوتی ہے۔

اِسکیلپ یا کھوپڑی کا چنبل Scalp Psoriasis- یہ قسم کھوپڑی پر نمودار ہوتی ہے چاندی کی طرح سفید پپڑیاں اور خارش آور ، لال لال سطحیں بن جاتی ہیں۔

اِنورس یا اُلٹا چنبل Inverse Psoriasis- یہ قسم جِلد کی تہوں اور شِکنوں کو مُتاثر کرتی ہے مثلاً بغلوں، رانوں اور کولہوں کے درمیان کی جِلد ۔ اِس کی خاصیت جِلد کے اُن حصوں سے معلوم ہوتی ہے، جو سُوجے ہوئے (تکلیف دہ اور پُھولے ہوئے) اور لال ہوتے ہیں۔ پسینہ اور رگڑ (جِلد کا ایک حصہ دوسرے سے یا کِسی اور چیز سے رگڑ کھا جائے) اِن علامات کو مزید بدتر کردیتے ہیں۔

 ناخُنوں کا چنبل Nail Psoriasis- اس قسم میں ناخُن بے رنگ اور داغدار(چھوٹی چھوٹی لکیریں) ہوجاتےہیں، اور وہ غیر معمولی انداز میں بڑھنے لگتے ہیں۔ ناخن اپنی جڑوں سے الگ ہونے لگتے ہیں اور ڈھیلے پڑ جاتے ہیں۔ ہاتھوں اور پاؤں دونوں کے ناخُن متاثر ہوسکتے ہیں اور شدید کیسِز میں ناخُن ٹُوٹ یا چٹخ سکتےہیں۔

آبلہ دار چنبل Pustular Psoriasis- اِس قسم میں پیروں، ہاتھوں اور اُنگلیوں کی پوروں پر بڑے بڑے دھبّے پڑجاتے ہیں اور وہ پِیپ زدہ چھالوں سے بھر جاتے ہیں۔

چنبلی جوڑوں کی سوزِش Psoriatic Arthritis- اس کی خاصیت تکلیف دہ جوڑ، سُوجے ہوئےجوڑ، پپڑی زدہ اور متورّم جِلد اور ناخنوں سے ہوتی ہے جو بے رنگ ہوجاتے ہیں۔

اِس مرض کی علامات بہت طرح کی ہوتی ہے کیونکہ یہ ہر مریض کو مُختلف انداز میں متاثر کرتی ہے۔ اس کےعام آثار اور علامات میں درج ذیل شامل ہیں:

• جِلد کے دھبّے جو لال ہوجاتے ہیں اور جن پر سفید پپڑیاں ہوجاتی ہیں۔

• پھٹی ہُوئی اور خُشک جِلد جس سے خُون بھی بہہ سکتا ہے۔

• دھبّے دار اور چٹخے ہُوئے ناخُن جو موٹے بھی ہوسکتے ہیں۔

• چھوٹے پرت دار یا پپڑی زدہ نِشانات۔

• جلن، خراش یا کُھجلی۔

• اکڑے ہُوئے یا پُھولے ہُوئے جوڑ

یہ بات مکمّل طور پر سمجھی نہیں جاسکی ہے کہ چنبل کِس وجہ سے ہوتا ہے، تاہم یہ مانا جاتا ہے کہ مدافعتی نِظام کے مخصوص خلیات غلطی سے صحتمند جِلدی خلیات پر حملہ کردیتے ہیں۔ اِس کے نتیجے میں، یہ خُودمدافعتی بیماری کہلائی جاتی ہے (جِسم کا اپنا مدافعتی نظام صحتمند خلیات پر حملہ کردیتا ہے)۔

ٹی-لمفوسائٹ T lymphocyte خُون کے سفید خلیوں (White blood cells) کی ایک ایسی قِسم ہے ، جو مدافعتی نظام سے متعلق سمجھی جاتی ہے۔ یہ خلیات عام طور پر ایسی ہر چیز کا مُقابلہ کرتے ہیں جو جسم میں نہیں ہونی چاہئیے تاکہ بیماری سے بچا جاسکے، مگر چنبل کے مریض میں یہ مانا جاتا ہے کہ یہی ٹی-لمفوسائٹ کے خلیات صحتمند جِلدی خلیات پر حملہ آور ہوتے ہیں، جِس کے نتیجے میں مُختلف علامات ظاہر ہوتی ہیں۔ یہ ابھی تک سمجھا نہیں جا سکا ہے کہ اِس مرض میں خلیات کیوں ناقص کام کرتے ہیں۔

چنبل متعدی بیماری نہیں ہے، یعنی یہ ایک فرد سے دُوسرے فرد کو نہیں لگتی ہے۔

یہ خیال کیا جاتا ہے کہ ماحولی عناصر اور مخصوص جینیات Genes اِس میں اپنا کِردار ادا کرتے ہیں۔ چنبل کا مرض خاندانوں میں چلتا ہے۔ طبّی تحقیق اِس بیماری کی وجہ جینیاتی عناصر سے جوڑتی ہے۔ بہت سی چیزیں چنبل کی علامات کو متحرّک کرنے کا باعِث سمجھی جاتی ہیں، جِن میں درج ذیل شامِل ہیں:

• اِنفیکشنز

• جِلد میں زخم ہونا

• امراضِ قلب

• مخصوص ادویات

• ذہنی دباؤ

• سِگریٹ نوشی

• بہت زیادہ مِقدار میں الکحل کا استعمال کرنا

• کُچھ کیمیائی اجزاء کا جِلد کے ساتھ مِلنا (جو ڈٹرجینٹس Detergents اور صابن میں موجود ہوتے ہیں)

چنبل کے خطرے کی علامات میں درج ذیل شامِل کی جاسکتی ہیں:

• اِس مرض کی فیملی ہِسٹری ہونا (خاندان میں پہلے پایا جانا)
• ذہنی دباؤ

• سِگریٹ نوشی

• بیکٹیریائی اور وائرل انفیکشنز

• موٹاپا

اِس مرض کی تشخیص بہت سے کیسِز میں بالکل سیدھا سادہ عمل ہوتی ہے۔ مُعالج اس کا آغاز مریض کے جِسمانی جانچ سے کرے گا اور جِلد، ناخُن اور کھوپڑی یا سر کی کھال کا بغور جائزہ لے کر کِسی قسم کے آثار اور علامات دیکھے گا۔ مریض کو اپنے معالج کو یہ بھی بتانا چاہئیے کہ آیا اُس کے خاندان میں کوئی اور اس مرض کا شِکار تو نہیں رہا۔

اِسکِن بائیوپسی Skin Biopsy کے ذریعے دُوسری مُمکنہ علامات و کیفیات کو خارِج ازامکان قرار دیا جا سکتا ہے، جو کہ اِسی طرح کی علامات کا باعث بنتی ہیں اور اِس مرض کی درست قسم کا پتہ لگایا جا سکتا ہے۔ بائیوپسی سے مُراد یہ ہے کہ مریض کی جِلد کا ایک چھوٹا سا ٹکڑا لیا جاتا ہے اور خوردبین کے ذریعے اس کا جائزہ لیا جاتا ہے۔

 چنبل کی قسم اور اُس کی علامات کی شِدّت پر اِنحصار کرتے ہُوئے اس مرض کے علاج کے متعدد طریقے ہیں۔

علاج کے ذریعے اِن علامات کو روکا اورجِلد کی حالت کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔

بیرونی/جِلدی (کریمز اور مرہم) علاج میں درج ذیل شامِل کیے جاسکتے ہیں:

• ٹوپیکل کورٹیکواسٹیرائیڈز Topical Corticosteroids

• وٹامن ۔ ڈی اینالوگز Vitamin D Analogues

• ریٹینوئیڈز Retinoids

• اینتھرالِن Anthralin

• سیلی سِیلِک ایسِڈ Salicylic Acid

• تارکول Coal Tar

روشنی سے علاج :Phototherapy (light therapy) مصنوعی یا قدرتی الٹراوائیلٹ روشنی کا استعمال کیا جاتا ہے اِس علاج میں سُورج کی روشنی کا مُختصر سامنا (جِو روشنی سُورج سے حاصِل کی جاتی ہے) کراکے علامات کو بہتر بنایاجاسکتا ہے۔

چنبل کے علاج کے لیے انجیکشنز اور کھانے والی دواؤں میں درج ذیل شامِل کی جاسکتی ہیں:

• ریٹینوئیڈز۔:Retinoids یہ جِلدی خلیات کی پیداوار روکنے میں مدد دے سکتی ہیں تاکہ وہ بڑھنے نہ پائیں

• سائیکلواسپورائن۔ :Cyclosporine یہ مدافعتی نظام کو دبانے کا کام کرتے ہیں تاکہ وہ خود پرحملہ نہ کرسکے

• میتھوٹریکسیٹ ۔:Methotrexate یہ جِلدی خلیات کی پیداوار کو روک کر سوزش کو دبانے کا کام کرتی ہیں

• حیاتیاتی ادویات :Biologic Medications یہ علامات کو ختم کرنے میں مدد دیتی ہیں اور مدافعتی نظام کو
خُود پر حملہ کرنے سے روکتی ہیں۔

چنبل کی متعدد ممکنہ پیچیدگیاں ہیں، جِن میں درج ذیل شامِل ہیں:

• چنبلی جوڑوں کی سوزِش :Psoriatic Arthritis یہ جوڑوں کی سوزش کی دوسری اِقسام کے نتیجے میں ہوسکتی
ہے، اور کُچھ کیسِز میں اس کا نتیجہ جوڑوں کی فعالیت کی ناکامی میں بھی نِکل سکتا ہے۔

• موٹاپا ۔:Obesity اس کی وجہ تو معلوم نہیں، مگر شدید چنبل کے نتیجے میں موٹاپے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے

چنبل کے مریضوں میں دیگر پیچیدگیوں میں درج ذیل شامل ہیں:

• ہائی بلڈ پریشر

• ٹائپ 2 ذیابیطس

• دل کی بیماری

• پارکنسنز ڈزیز

• خودمدافعتی بیماریاں

ایسی بہت سی چیزیں ہیں جو آپ گھر بیٹھے کرسکتے ہیں تاکہ چنبل کے ساتھ زندگی گُزارنا آسان ہوجائے۔ سب سے پہلے، اپنے مرض کے محرکات جانئے اور اُن سے بچاؤ کا ہرممکن اقدام کریں۔ دیگر باتیں جن سے مدد لی جاسکتی ہے، اُن میں شامل ہے:

• روزانہ غُسل کرنا

• جِلد پر ملائم صابن کا استعمال) جِلد کی pHسےمتوازن صابن(

• ڈٹرجینٹس سے بچاؤ یا استعمال کے وقت دستانے پہننا

• جِلد پر کم مقدار میں سُورج کی روشنی دکھانا

• غُسل کے بعد معیاری اور اچھے موئسچرائزر کا استعمال

Author Avatar

About Author

Loremipsumdolorsitamet,consecteturadipisicingelit,seddoeiusmodtemporincididuntutlaboreetdoloremagnaaliquatenimadminimveniam.Eascxcepteursintoccaecatcupidatatnonproident,suntinculpaquiofficiadeserunt.

Add Comments